View RSS Feed

BunnY

Insha Jii Utho Ab Kouch Karo .. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا

Rate this Entry
Quote Originally Posted by BunnY View Post
انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا : ابن انشاء

انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا
وحشی کو سکوں سےکيا مطلب، جوگی کا نگر ميں ٹھکانا کيا

اس دل کے دريدہ دامن میں، ديکھو تو سہی سوچو تو سہی
جس جھولی ميں سو چھيد ہوئے، اس جھولی کا پھيلانا کيا

شب بيتی، چاند بھی ڈوب چلا، زنجير پڑی دروازے پہ
کيوں دير گئے گھر آئے ہو، سجنی سے کرو گے بہانہ کيا

پھر ہجر کی لمبی رات مياں، سنجوگ کی تو يہی ايک گھڑی
جو دل ميں ہے لب پر آنے دو، شرمانا کيا گھبرانا کيا

اس حسن کے سچے موتی کو ہم ديکھ سکيں پر چھو نہ سکيں
جسے ديکھ سکيں پر چھو نہ سکيں وہ دولت کيا وہ خزانہ کيا

جب شہر کے لوگ نہ رستہ ديں، کيوں بن ميں نہ جا بسرام کریں
ديوانوں کی سی نہ بات کرے تو اور کرے ديوانہ کيا

Submit "Insha Jii Utho Ab Kouch Karo .. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا" to Digg Submit "Insha Jii Utho Ab Kouch Karo .. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا" to del.icio.us Submit "Insha Jii Utho Ab Kouch Karo .. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا" to StumbleUpon Submit "Insha Jii Utho Ab Kouch Karo .. انشا جی اٹھو اب کوچ کرو، اس شہر ميں جی کو لگانا کيا" to Google

Tags: None Add / Edit Tags
Categories
Uncategorized

Comments