View RSS Feed

BunnY

Talkhi Zaban Tak Thi Wo Dil Ka Bura Na Tha .. تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا

Rate this Entry
Quote Originally Posted by BunnY View Post
تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا : واصف علی واصف

تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا
مجھ سے جدا ہوا تھا مگر بے وفا نہ تھا

طرفہ عذاب لائے گی اب اس کی بددعا
دروازہ جس پہ شہر کا کوئی کھلا نہ تھا

شامل تو ہوگئے تھے سبھی اک جلوس میں
لیکن کوئی کسی کو بھی پہچانتا نہ تھا

آگاہ تھا میں یوں تو حقیقت کے راز سے
اظہار حق کا دل کو مگر حوصلہ نہ تھا

جو آشنا تھا مجھ سے بہت دور رہ گیا
جو ساتھ چل رہا تھا مرا آشنا نہ تھا

سب چل رہے تھے یوں تو بڑے اعتماد سے
لیکن کسی سے پاؤں تلے راستہ نہ تھا

ذروں میں آفتاب نمایا تھے جن دنوں
واصفؔ وہ کیسا دور تھا وہ کیا زمانہ تھا

Submit "Talkhi Zaban Tak Thi Wo Dil Ka Bura Na Tha .. تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا" to Digg Submit "Talkhi Zaban Tak Thi Wo Dil Ka Bura Na Tha .. تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا" to del.icio.us Submit "Talkhi Zaban Tak Thi Wo Dil Ka Bura Na Tha .. تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا" to StumbleUpon Submit "Talkhi Zaban Tak Thi Wo Dil Ka Bura Na Tha .. تلخی زبان تک تھی وہ دل کا برا نہ تھا" to Google

Tags: None Add / Edit Tags
Categories
Uncategorized

Comments