View RSS Feed

BunnY

Wo Jo Ajatay Thay Ankho May Sitaray Leay Kar . وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں*ستارے لے

Rate this Entry
Quote Originally Posted by BunnY View Post
وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں ستارے لے کر:احمد فراز


وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں ستارے لے کر
جانے کس دیس گئے خواب ہمارے لے کر

چھاؤں میں بیٹھنے والے ہی تو سب سے پہلے
پیڑ گرتا ہے تو آ جاتے ہیں آرے لے کر

وہ جو آسودۂ ساحل ہیں انہیں کیا معلوم
اب کے موج آئی تو پلٹے گی کنارے لے کر

ایسا لگتا ہے کہ ہر موسم ہجراں میں بہار
ہونٹ رکھ دیتی ہے شاخوں پہ تمہارے لے کر

شہر والوں کو کہاں یاد ہے وہ خواب فروش
پھرتا رہتا تھا جو گلیوں میں غبارے لے کر

ؔنقدِ جاں صرف ہوا کلفتِ ہستی میں فراز
اب جو زندہ ہیں تو کچھ سانس ادھارے لے کر

Submit "Wo Jo Ajatay Thay Ankho May Sitaray Leay Kar .  وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں*ستارے لے" to Digg Submit "Wo Jo Ajatay Thay Ankho May Sitaray Leay Kar .  وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں*ستارے لے" to del.icio.us Submit "Wo Jo Ajatay Thay Ankho May Sitaray Leay Kar .  وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں*ستارے لے" to StumbleUpon Submit "Wo Jo Ajatay Thay Ankho May Sitaray Leay Kar .  وہ جو آ جاتے تھے آنکھوں میں*ستارے لے" to Google

Tags: None Add / Edit Tags
Categories
Uncategorized

Comments