[Dear Guest/Member you can't see link before replyclick here to register]


Assalam Aliykum!
My new poetry..

مت پوچھ یہاں کس کرب کی برسات ہوتی ہے ہر روز
بہت ہی اداس میرے وطن کی کائنات ہوتی ہے ہر روز
کچلا جاتا ہے بنتِ حوّا کا آنچل سرِ عام
کس قدر رسوا یہاں عورت ذات ہوتی ہے ہر روز
جینے کا رواج نہیں یہاں زندگی کو گزارا جاتا ہے
کس قدر تڑپتی یہاں حیات ہوتی ہے ہر روز
میرے وطن کے لوگوں کی خاصیت ہے ذہنی غلامی
حکمرانوں کی جیت میں عوام کی مات ہوتی ہے ہر روز
مت لکھو تم شہرِ قائد کو اب روشنیوں کا شہر
خوف کے اندھیروں میں ڈوبی یہاں رات ہوتی ہے ہر روز
غیرتِ مسلم اب شائد زندہ نہیں رہی فیصلؔ
کرنا بے حجاب عزّتوں کو خوشی کی بات ہوتی ہے ہر روز

فیصلؔ شبیر

Mat Pooch Yahan Kis Karb Ki Barsat Hoti Hai Her Roz
Bohat Hi Udas Mere Watan Ki Kainat Hoti Hai Her Roz
Kuchla Jata Hai Bint-e-Hawwa Ka Aanchal Sar-e-Aam
Kis Qadar Ruswa Yahan Aurat Zaat Hoti Hai Her Roz
Jeene Ka Riwaaj Nahi Yahan Zindagi Ko Guzara Jata Hai
Kis Qadar Tarapti Yahan Hayaat Hoti Hai Her Roz
Mere Watan K Logon Ki Khasiyat Hai Zehni Ghulami
Hukamrano Ki Jeet Main Awam Ki Maat Hoti Hai Her Roz
Mat Likho Tum Shehar-e-Quaid Ko Ab Roshniyon Ka Shehar
Khof K Andheron Main Doobi Yahan Raat Hoti Hai Her Roz
Ghairat-e-Muslim Ab Shayd Zinda Nahi Rahi Faisal
Karna Be Hijab Izzaton Ko Khushi Ki Baat Hoti Hai Her Roz

Faisal Shabir