1. #1
    humaira's Avatar
    Senior Member
    Nov 2010
    Baltimore, Maryland, United States
    153

    ڈھورنڈوگے اگ ملکوں ملکوں

    ڈھورنڈوگے اگ
    ملکوں ملکوں ۔ ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم
    تعبیر ہے جس کی حسرت و غم ۔ اے ہم نفسو وہ خواب ہیں ہم
    میں حیرت و حسرت کا مارا خاموش کھڑا ہوں ساحل پر
    دریائے محبت کہتا ہے آ کچھ بھی نہیں پایاب ہیں ہم
    اے درد بتا کچھ تو ہی پتہ ۔ اب تک یہ معمہ حل نہ ہوا
    ...ہم میں ہے دل بے تاب نہاں یا آپ دل بےتاب ہیں ہم
    لاکھوں ہی مسافر چلتے ہیں، منزل پہ پہنچتے ہیں دو ایک
    اے اہل زمانہ قدر کرو نایاب نہ ہوں کمیاب ہیں ہم

  2. #2
    Sahaili's Avatar
    Senior Member
    Dec 2010
    777


  3. #3
    Nov 2010
    Cervera, Cataluna, Spain, Spain
    6,419
    Verrrrrrrrrrrrry Nice Sharrrrrrrrrrrrring .. Keep It UUUUUUUUUUUUUp !!!!!!!!!!!!!!!

    ​




 

 

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)

Bookmarks

  •